Iran legitimized Azerbaijan's rights

ایران نے بھی مسئلہ قارا باغ پر آذربائیجان کے حقوق کو جائز قرار دے دیا

ایران کا آذربائیجان کی ملکی سالمیت اور اس پر عمل در آمد کے معاملے پر مؤقف قدرے واضح ہے

حکومتِ ایران کے ترجمان علی ربیع کا کہنا ہے کہ آرمینیا کے آذربائیجان کی سرزمین پر قبضے کے باعث پیدا ہونے والے مسئلے کا پر امن طریقے سے حل تلاش کرنا لازمی ہے اور ایران ، ترکی اور روس اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عمل درآمد کے لیے مذکورہ دونوں ممالک کے لیے اعانت فراہم کر سکتے ہیں۔


ایرانی سرکاری خبر رساں ایجنسی کی خبر کے مطابق دارالحکومت تہران میں پریس بریفنگ دینے والے ربیع نے آذربائیجان اور قارا باغ علاقے پر قبضہ جمانے والے آرمینیا کے مابین موجودہ کشیدگی پر اپنے جائزے پیش کیے۔


علاقے میں قبضے سے قبل کے حالات کو لوٹنے کے لیے پر امن حل تلاش کرنے کی ضرورت پر زور دینے والے اور اس معاملے میں دونوں ممالک سے تعاون کے لیے تیار ہونے کا اظہار کرنے والے ربیع نے بتایا کہ ’’ایران کا آذربائیجان کی ملکی سالمیت اور اس پر عمل در آمد کے معاملے پر مؤقف قدرے واضح ہے، اور اس نے عالمی قوانین اور اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے دائرہ کار میں اس جائز حق کا بار ہا اظہار کیا ہے۔


انہوں نے مزید بتایا کہ دونوں ممالک کو آپس میں ڈائیلاگ قائم کرنے اور اس مسئلے کا حل تلاش کرنے کے علاوہ کوئی دوسرا حل چارہ موجود نہیں ، اس کے علاوہ کی تمام تر کاروائیاں خطے کے عوام کے مفادات میں معاون ثابت نہیں ہوں گی۔


(Visited 9 times, 1 visits today)

ایران نے بھی مسئلہ قارا باغ پر آذربائیجان کے حقوق کو جائز قرار دے دیا” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں